سب سے پہلے ایک بات یاد رکھیں کہ کمپیوٹر کی دنیا میں جس تحریر کو کمپیوٹر سمجھتا ہے وہی اصلی تحریر ہے۔
اب آتے ہیں اردو کی طرف ۔آسان الفاظ میں ہم یوں کہہ سکتے ہیں کہ کمپیوٹر جس اردو تحریر کو مکمل سمجھے اسے ہی کمپیوٹر کی اردو کہا جائے گا۔ اب جیسے ہم کسی فائل یا فولڈر کا نام رکھتے ہیں تو کمپیوٹر اس نام کی پہچان رکھتا ہے اور ہمارے تلاش کرنے پر تلاش کر کے مہیا کر دیتا ہے۔ اسی طرح کسی تحریر میں جب ہم کچھ تلاش کرنا چاہیں تو کمپیوٹر ہمیں تلاش کر کے نتائج دیتا ہے۔
شروع میں کمپیوٹر کے اینکوڈنگ سسٹم میں اردو کی سپورٹ شامل نہیں تھی جس کی وجہ سے کمپیوٹر پر براہ راست اردو لکھنا ممکن نہیں تھا۔ لیکن اردو والوں کی لگن نے کمپیوٹر پر اردو لکھنا ممکن بنایا اور کچھ ایسے سافٹ ویئر بنائے جن کی مدد سے کمپیوٹر پر اردو لکھنا ممکن ہوا۔جیسا کہ صدف، شہکار اور ان پیج وغیرہ نے کمپیوٹر پر اردو لکھنا ممکن بنایا۔ ان سافٹ ویئر کی اردو تحریر یا تو انہیں سافٹ ویئرز میں نظر آتی تھی یا پھر کسی ایک دو سافٹ ویئر میں کاپی پیسٹ ہو سکتی تھی لیکن ان سافٹ ویئرز کی اردو تحریر کو کمپیوٹر براہ راست سمجھ نہیں سکتا تھا۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ ان سافٹ ویئرز میں اردو کے حروف اور الفاظ کی تصاویر شامل کر دی گئی تھیں۔ جب کوئی کنجی(Key) دبائی جاتی تو اس کے متبادل اردو کی تصویر سامنے آ جاتی۔ یہ سب کام یہ سافٹ ویئر خود ہی کرتے تھے یعنی آپریٹنگ سسٹم کا اینکوڈنگ سسٹم استعمال نہیں کرتے تھے۔
کمپیوٹر اور انٹرنیٹ کی ترقی کے ساتھ ساتھ کمپیوٹر اور انٹرنیٹ پر اردو کی مزید ضرورت محسوس ہوئی تو اردو والوں نے انہیں سافٹ ویئرز سے اردو تحریر کو تصویر میں تبدیل کر کے استعمال کرنا شروع کر دیا۔ کیونکہ کمپیوٹر اور انٹرنیٹ پر انگریزی کی طرح براہ راست اردو لکھنا ممکن نہیں تھا۔ اس لئے تصویری اردو سے ہی کام چلایا جاتا۔ وقت کے ساتھ ساتھ یونیکوڈ اینکوڈنگ سسٹم نے ترقی کی اور دنیا کی بڑی کمپنیوں نے اسے استعمال کرنا شروع کر دیا اور سب سے بڑ کر یونیکوڈ والوں نے اردو کی سپورٹ دی ۔ اور یوں انگریزی کی طرح کمپیوٹر پر براہ راست اردو لکھنا بھی ممکن ہوا۔
جس طرح کسی فائل کا نام یا کسی بھی سافٹ ویئر میں انگریزی لکھی جاتی ہے بالکل اسی طرح اب ہم اردو بھی لکھ سکتے ہیں۔ لیکن جب تصویری اردو کا زمانہ تھا تب یہ ممکن نہیں تھا کیونکہ کمپیوٹر تصویری اردو کو کوئی تحریر نہیں سمجھتا تھا بلکہ ایک عام تصویر ہی سمجھتا تھا لیکن اب ایسا نہیں کیونکہ اب تصویری اردو نہیں بلکہ یونیکوڈ کی وجہ سے بالکل انگریزی تحریر کی طرح کمپیوٹر میں کسی بھی جگہ کسی بھی سافٹ ویئر میں اردو تحریر لکھی جا سکتی ہے۔
مندرجہ بالا تھوڑی بہت تفصیل سے یہ بات واضح ہو گئی ہے کہ کمپیوٹر کی “اردو” وہی ہے جیسے کمپیوٹرباقی زبانوں کی طرح لکھتا اور سمجھتا ہے۔ “تصویری اردو” ایسے ہی ہے جیسے کوئی دوسری تصویر۔
جیسا کہ ہم دنیا کے ساتھ ساتھ ترقی نہیں کر رہے ایسے ہی ہمارے کچھ دوست جو اپنے کام کمپیوٹر پر سرانجام دینے کے لیے کمپیوٹر پر اردو لکھتے ہیں مگر وہ آج بھی اُسی پرانے زمانے میں ہیں جہاں اردو تصویری تھی۔ یہی حال ہمارا انٹرنیٹ پر بھی ہے۔ لیکن کچھ ایسے بھی دوست ہیں جو وقت کے ساتھ ساتھ اردو کو بھی جدید تکنیک کے مطابق لکھتے ہیں۔ ویسے بھی تصویری اردو کو کمپیوٹر ایک تصویر ہی سمجھتا ہے لیکن اب یونیکوڈ کی وجہ سے کمپیوٹر کی اردو وجود میں آ چکی ہے جسے کمپیوٹر دوسری زبانوں کی طرح لکھتا بھی ہے اور سمجھتا بھی ہے۔ اور جب ہم کمپیوٹر کو اردو میں کوئی سوال کرتے ہیں تو وہ ہمیں جواب بھی دیتا ہے جبکہ تصویری اردو میں ایسا ممکن نہیں تھا۔ اس لئے اے اردو والوں آج سے تصویری اردو کو چھوڑو، کمپیوٹر پر اردو کی تنصیب (Install)کرو اور کمپیوٹر کی اصل اردو کی طرف آ جاؤ۔ ویسے بھی کمپیوٹر پر اردو کی تنصیب کوئی مشکل نہیں بلکہ ایک دو منٹ میں آپ اپنے کمپیوٹر میں اردو کی تنصیب کر سکتے ہیں۔ اردو کی تنصیب کیسے کی جاتی ہے اُس کے لیے یہاں دیکھیں